آخر جہانگیرترین ہی کیوں۔اصل بات

آخر جہانگیرترین ہی کیوں۔اصل بات

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین کو زرعی ٹاسک فورس کے سربراہ کے عہدہ سے ہٹاد یا گیا۔
چینی بحران کی تحقیقاتی رپورٹ میں انکشاف ہوا تھا کہ بحران میں سے سب سے زیادہ فائدہ اٹھانے والوں میں جہانگیر ترین ہیں اور انہوں نے سبسڈی کی مدد میں 56 کروڑ روپے اپنی جیب میں ڈالے، ذرائع کے مطابق جہانگیر ترین کو زرعی ٹاسک فورس کے سربراہ کے عہدہ سے فارغ کر دیا گیا ہے اور 25 اپریل کو انکوائری کمیٹی کی حتمی رپورٹ آنے پر بعد ذمہ دران کے خلاف مزید کارروائی ہو گی۔

آخر جہانگیرترین ہی کیوں۔اصل بات

یاد رہے کہ چینی بحران پر وزیراعظم عمران خان کی جانب سے قائم کردہ تحقیقاتی کمیٹی کی رپورٹ سب کے سامنے آگئی ہے، ڈی جی ایف آئی اے واجد ضیاء کی سربراہی میں قائم تحقیقاتی ٹیم کی جانب سے تیار کردہ رپورٹ میں میں سیاست کے بڑے بڑے مگر مچھاور ان کے رشتے داروں کے نام شامل ہیں، اور رپورٹ میں بتایا

یہ خبر بھی پڑھیں:چینی آٹے کے بحران کا سب سے بڑا مجرم

گیا ہے کہ چینی کے بحران میں حکومتی جماعت تحریک انصاف کے سینئر رہنما جہانگیر ترین نے سب سے زیادہ فائدہ اٹھایا، اور انہوں نے سبسڈی کی مدد میں 56 کروڑ روپے اپنے نام کئے جب کہ وفاقی وزیر خسرو بختیار کے رشتہ دار نے آٹا و چینی بحران سے 45 کروڑ روپے اپنی جیب میں ڈالے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

آخر جہانگیرترین ہی کیوں۔اصل بات” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں