بھارت میں مسلم عورت پر تشدد حمل ضائع ہوگیا

بھارت میں مسلم عورت پر تشدد حمل ضائع ہوگیا

بھارت میں درد کی وجہ سے اسپتال آنے والی مسلم عورت پر کورونا وائرس پھیلانے کا الزام لگا کرتشدد کا نشانہ بنایا گیا جس کی وجہ سے خاتون کا بچہ دُنیا میں آنے سے پہلے ہی مر گیا ۔

بھارت میں مسلم عورت پر تشدد حمل ضائع ہوگیا

بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست جھاڑکھنڈ کے علاقے جمشید پور میں حاملہ رضوانہ بی بی درد اور خون نکلنے کی شکایت کے باعث ایم جی ایم اسپتال آئی جہاں اس کو پرچی کے لیے مسلمان مریضوں کے لیے بنائی گئی قطار میں کھڑا کیا گیا۔

یہ خبر بھی پڑھیں : ہندوستان کی حاملہ بیٹی سے اجتماعی زیادتی

اس دوران خاتون کا خون زمین پر گر گیا جس پر اسپتال کی انتظامیہ اور ہندو مریضوں نے ہنگامہ کھڑا کردیا اور خاتون سے صفائی کرنے کو کہا کیونکہ اس وجہ سے کورونا وائرس دیگر مریضوں میں لگنے کا خطرہ تھا۔ خاتون کمزوری باعث صفائی نہ کرسکیں تو ظالم ہندوؤں نے جوتیوں سے مارنا شروع کر دیا ۔
ہجوم کے تشدد سے خاتون کا حمل ضائع ہوگیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں