دوہزار بیس میں موٹر سائیکلوں کی قیمیتں

دوہزار بیس میں موٹر سائیکلوں کی قیمیتں

یاماہاکمپنی کی جانب سے ڈیلرز کو جاری کردہ نوٹس میں یاماہاماڈل وائے بی ایک سو پچس زی کی قیمت میں آٹھہزار اضافے کے بعدایک لاکھ چالیس ہزار کردی گئی ہے۔ اس قیمت میں سترہ فی صد ٹیکس بھی شامل کیا گیا ہے۔ اسی طرح یاماہا وائے بی آر ایک سو پچس جی کی قیمت میں ساڑھے آٹھ ہزارہزار روپے اضافہ کرکیا ایک لاکھ بہترہزار اوروائے بی آر ایک سو پچس کی قیمت میں آٹھ ہزار اضافہ کرکے ایک لاکھ چونٹس ہزار کردی گئی ہے۔

دوہزار بیس میں موٹر سائیکلوں کی قیمیتں
دوہزار بیس میں موٹر سائیکلوں کی قیمیتں

دوہزار بیس میں موٹر سائیکلوں کی قیمیتں

2019میں موٹر سائیکل کی خریداری میں تیس فی صد کمی واقع ہوئی ہے جس کی وجہ سے موٹر سائیکل بنانے والی کمپنیاں اپنے اخراجات پورے کرنیکے لیے قیمتوں میں اضافہ کررہی ہیں۔
حکومت کی جانب سے ایس آر وچھ سو پچپن کی منسوخی کی خبریں گردش میں ہیں۔ اس حکم نامے میں دی گئی رعایت کی بنیاد پر پندرہ،دس اور زیرو ڈیوٹی پرموٹر سائیکل کے پرزوں کی درآمد کی جاتی ہے جب کہ عام طور پر آٹو کمپنیاں پرزوں کی درآمد پر پچاس فیصد ڈیوٹی ادا کرتی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں