سبینہ محمود نیوجرسی امریکہ

سبینہ محمود نیوجرسی امریکہ

سبینہ محمود نیوجرسی امریکہ
                                         سبینہ محمود نیوجرسی امریکہ

کہا جاتا ہے کہ عورت اپنی جواں عمری میں صر ف اپنے بناؤ سنگھار کا سوچتی ہے اور اگر عورت پاکستانی ہو اور بیرون ملک رہتی ہو تو پھر بس اللہ ہی حافظ مگر شاید فرق صرف ماں باپ کی تربیت کا ہوتا ہے۔ پرانے وقتوں میں جب کبھی کسی لڑکی کا رشتہ دیکھنے جاتے تھے تو کہتے تھے کہ اگر لڑکی کو دیکھنا ہے تو اس کی ما ں کو دیکھ لو کیونکہ لڑکی کا اصل روپ اس کی ماں ہو تی ہے۔بیرون ملک رہنے والی لڑکیوں میں کچھ ایسی بھی ہیں جو آج بھی پاکستا ن کی مٹی سے جوڑی ہیں اور اپنا کلچر اور کلچرل ولیوز کو دل سے لگائے ہوئے ہیں۔ پاکستان کی بہت ساری فیملیز امریکہ میں مقیم ہے اور وہاں رہتے ہوئے بھی دل کی ڈھرکن جب بھی تیز ہوئی تو دھک دھک کی آواز سے پاکستان زندباد ہی سُنائی دیا۔

سبینہ محمود نیوجرسی امریکہ

ایک ایسا ہی دل رکھنے والی ہنر مند لڑکی امریکہ نیو جرسی میں رہتی ہے مگر اس کا دل پکا سچا پاکستانی ہے۔ رہن سہن، کلچر اور پاکستان سے لگاؤ اس قدر ہے کہ گوروں کے ساتھ رہ کر بھی گڈمارننگ کے بجائے اسلام علیکم کہنے میں فخر محسوس کرتی ہے اور پاکستانیت کا ثبوت دیتی ہے۔ پاک، سر،زمین کی لاج رکھنے والی اس پاکستانی کی بیٹی کو سبینہ محمود کہتے ہیں۔

سبینہ کے والدین چالیس سال پہلے امریکہ نیو جرسی آئے تھے اور پھریہاں کے ہوکے رہ گئے مگر کوئی نہیں جانتا تھا کہ ان کے گھر پید اہونے والی بیٹی سبینہ ان کا سر فخر سے بلند کر دے گی۔ سبینہ پروفیشن کے لحاظ سے میڈیکل سائنس کی فیلڈ میں فارمیسی اینلسٹ ہیں اس کے ساتھ ساتھ مسلم کمیونٹی کے ایونٹ کی سربراہی بھی کرتی ہیں۔ یہ سب لوگ جانتے ہیں کہ پردیس کی زندگی بہت مصروف ہوتی ہے مگر ان سب مصروفیات کے باوجود کمیونٹی ایونٹ کے لئے ٹائم نکلنا تو کوئی سبینہ سے سیکھے۔ اپنی جگہ بنانا چاہے دل میں ہو یا کسی بھی جگہ آسان نہیں ہوتا مگر سبینہ اپنے ہنر سے ہر جگہ اپنی جگہ بنانا لیتی ہے۔ فیشن سوز، میوزیکل کنسٹرٹس یا مشاعرہ یا کوئی بھی کمیونٹی ایونٹ ہوتونیوجرسی میں مقیم لوگوں کی زبان پر صرف سبینہ کا نام ہی آتا ہے کہ بے فکر ہو جاو سبینہ کروالے گی۔

سبینہ محمود
سبینہ محمود

سبینہ کا کہنا ہے کہ انہیں بچپن سے شوق تھا کہ وہ لوگوں کی مد د کریں تو اس درد دل رکھنے والی لڑکی نے بہت سے چیریٹی ایونٹ کروائے تاکہ کسی کی مدد ہو سکے تو بہت سارے ایسے کمیونٹی ایونٹ جو کہ لوگوں کی فلاح وبہبود کے لئے ہو سکیں ان کا موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیتی۔ امریکہ کا ایک فورم ویمن ٹو ویمن جس کی سربراہ نصرت سہیل ہیں ان کے مطابق آج تک سبینہ نے جو بھی کام کیا یا پھر جس کام کو بھی ہاتھ ڈالا وہ اُسے سونا بن کے ملا۔پاکستان کی اس ہنر مند بیٹی نے امر یکہ آنے والے پاکستاینوں کے ہمیشہ ایک مثال چھوڑی ہے۔

سبینہ محمود نیوجرسی امریکہ
سبینہ محمود نیوجرسی امریکہ

آج کے دور کی اس لڑکی موسیقی سے دلچسبی تھوڑی پرانی ہے فریدہ خانم، عابدہ پروین اور نو جہاں کو سننا سبینہ کا شوق ہے اور ان کا شوق انہیں ان کے قریب بھی لے گیا اور پیار محبت سمٹنے والی اس ہنر مند لڑکی نے فریدہ خانم اور عابدہ پروین کا پیا ر بھی سمٹ لیا۔پیا ر محبت کی اس دیوی نے نہ صرف مسلم کمیونٹی سے پیا ر لیا اور دیا بلکہ کہ یہاں کی ہندو کمیونٹی سے بھی اپنا پیا ر ڈال لیا اور یہ ثابت کیا کہ کوئی سے کم تر نہیں سب انسان ہے چاہے اللہ جی کے منانے والے ہو یا پھر رام جی کے۔
سبینہ کا ہمیشہ خیال رہا ہے کہ (یونٹی اس کمیونٹی) اسی وجہ سے سبینہ چاہے ہندو ہوں یا مسلم سب کے لئے ایک سے احساسات اور جذبات رکھتی ہے۔
آج کل کے سالانہ فورم کی تیاریاں چل ہی ہیں اور سبینہ اپنی ہنر مندی کے جوہر اس سالانہ فورم میں بھی دیکھے گی۔ ویمن ٹوویمن کی سربراہ نصرت سہیل کے مطابق سبینہ ان کی ان سٹوڈنٹس میں سے ہے جس سے ہمیشہ ویمن ایمپاورمنٹ کی اعلی مثا ل قائم کی اور پاکستان کے معاملے میں ہمیشہ دشمن کو منہ تور جواب دیا ہے اورکلمہ شہادت کی لاج رکھی ہے اور یہ ثابت کیا ہے کہ میں ہوں ہنر مند پاکستان کی ترجمان۔
اگرآپ بھی سبینہ سے رابطہ کرنا چاہتے ہیں یا پھر اس سفر میں سبینہ کا ساتھ دینا چاہتے ہیں تو ان لنک کو فالو کریں

http://www.facebook.com/SabinaM428

http://www.instagram.com/SabinaM428  

                                                                                                http://www.twitter.com/SabinaM428

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں