سرسوں کے تیل کا کاروبار

سرسوں کے تیل کا کاروبار

دوستوں آپ نے بازار سے پلاسٹک کی خالی بوتلیں لے لینی ہیں جو کہ آپ کو تقربیا ایک روپے یا سوا روپے کی مل جائے گی اس کے ساتھ ساتھ آپ نے سرسوں کے تیل کے کولہو سے خالص سرسوں کا تیل تقریبا بیس کلو لے کر اچھی طر ح چائے والی پو نی سے چھا ن لیں تاکہ اگر کوئی گند ے ذرات ہے تو وہ نکل جائے اور تیل صاف ہو جائے۔ اس کے بعد آپ نے اپنے نام کے سٹیکر ز چھپوا کر پلاسٹک کی بوتلوں پر لگا دینے ہیں۔

سرسوں کے تیل کا کاروبار

ا ٓپ نے اب ان بوتلوں کے اندر ایک سو پچاس گرام تیل پیک کرنا ہے اس کے بعد آپ نے وہ بوتلیں دکانداروں کو دینی ہیں تاکہ آپ کی سیل بڑھ سکے۔ اپنی سیل برھنے کے لئے آپ نے دکاندار کو اپنی روز کی طے شدہ بوتلوں کی بجائے دو بوتلیں زیادہ دینی ہیں اس سے دکاندار خوش ہو گا کہ مجھے دو بوتلیں زیادہ مل رہی ہیں جن کو بیچ کر مجھے ایکسٹرا منافع ہو گا تو اس طر ح سے آپ کی روز کی سیل بھی بڑھ جائے گی اور آپ کا منافع بھی۔

آپ نے وہ بوتل سیل کرنی ہے پنتالیس کی اگر آپ کو تیل 180روپے کا ملتا ہے تو اگر آپ چھ بوتلیں پیک کرتے ہیں تو فی بوتل کی قیمت آپ کو 28روپے پڑتی ہیں اور اگر دو روپے اس پر خرچہ لگائے تو تقربیا تیس روپے کی پرتی ہے مگر آپ سیل کر رہے تو آپ کو ایک بوتل کے پیچھے پندرہ روپے بچتے ہیں تواس طر ح اگر کوئی دکاندار آپ سے ایک درجن بوتلیں لیتا ہے تو ایک دکاندار سے آپ کو ایک سو اسی روپے کی بچت آتی ہے اگر آپ روز کی دس دکانیں ڈھوند لیں آپ اپنا علاقہ بھی تبدیل کر سکتے ہیں اور کوشش کرنی ہے کہ روز کی دس درجن بوتلیں سیل کر نی ہیں اور اگر آپ روز دس درجن بوتلیں سلے کر کت آتے ہیں تو آپ کو روز کی آٹھارہ سو روپے کی بچت آتی ہے تو اس طر ح آپ اگر اس رقم کو جمع کریں تو آپ کو55000روپے مہنیے کا بچتا ہے جو ایک بہت اچھی رقم ہے تو ہمت پکڑو اورثابت کر دوں کہ تم ہو ہنر مند پاکستان کے ترجمان۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

سرسوں کے تیل کا کاروبار” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں