سینیٹائزر استعمال کر نیوالے ذرا یہ خبر پڑھیں لیں

سینیٹائزر استعمال کر نیوالے ذرا یہ خبر پڑھیں لیں

سینیٹائزر استعمال کر نے سے کہنیوں تک الرجی جیسی بیماری کی شکایات بڑھ رہی ہیں، آنکھوں میں بھی جلن ہوتی ہے جب کہ کچھ کو خشک خارش کی بھی شکایت رہنے لگی ہے۔

سینیٹائزر استعمال کر نیوالے ذرا یہ خبر پڑھیں لیں

کورونا وائرس سے محفوظ رہنے کے لیے بیشتر لوگ سینیٹائزر کا استعمال شاید ضرورت سے زیادہ کررہے ہیں، بعض لوگ تو چوبیس گھنٹے میں پندر ہ سے زیادہ مرتبہ ہاتھوں کو سینیٹائزرسے صاف کرتے ہیں، سینیٹائزر میں الکوہل۔سپرٹ۔اور دیگر جیسے جراثم کش مواد شامل ہو تے ہے جس سے انگلیوں، ہاتھوں بلکہ کہنیوں تک الرجی کی شکایات سامنے آرہی ہیں، آنکھوں میں جلن بھی ہوتی ہے، کچھ کو خشک خارش بھی تنگ کر نے لگی ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں:کوروناوائرس سے بچاوُ

ماہرین جلد نے مشورہ دیا ہے کہ سینیٹائزر کا استعمال صرف دو سے تین مرتبہکریں،پانچ چھ مرتبہ سادہ پانی سے ہاتھ منہ دھوئیں بالخصوص آنکھوں کی صفائی کا خاص خیال رکھیں۔ پھر بھی الجھن محسوس ہو تو رات کو سونے سے پہلے سرسوں کا تیل کا ستعمال کریں، الرجی، خشکی اور خارش سیچھٹکارہ پائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں