شانزے منیر نے یہ جوتے کیوں بنائے

شانزے منیر نے یہ جوتے کیوں بنائے

گورنمنٹ کالج یونیورسٹی آف فیصل آباد میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کی طالبہ شانزہ منیر نے اپنی ہنر مندی سے پاکستان کا نام روشن کر دیا۔۔ انہوں نے نابیناافراد کی زندگی کو آسان میں آسانیاں پیدا کرنے کے لئے ایکپاکستان کی تاریخ میں پہلی بار نئی ٹیکنالوجی سے بھر پور جوتے متعارف کروا دئیے۔ یہ سمارٹ جوتینابینا افراد کو چلنے پھرنے میں مدد دے گئے اور وہ ایک آسان قدم اُٹھا سکیں گئے۔

شانزے منیر نے یہ جوتے کیوں بنائے
شانزے منیر نے یہ جوتے کیوں بنائے

Shanza Munir is student of Information Technology at Government College University Faisalabad. This is her final Year Project for Blind Persons.

شانزے منیر نے یہ جوتے کیوں بنائے

شانزہ نے یہ پروڈکٹ اپنے فائنل ائیر کے پروجیکٹ کے لئے تیار کئے ہیں۔
ان میں ایسا ڈیٹیکشن سسٹم استعمال کیا گیا ہے جو دوسو سینٹی میٹر یا دو میٹر کے علاقے میں سامنے آنے والی تمام رکاؤٹوں کے بارے میں پہلے سے ہی اشارہ دیں گئے۔
ان کا مزید کہناتھا کہ انہیں ہمیشہ نابینا افراد کو دیکھ کے دکھ ہوتا تھا ان کی خواہش تھی کہ وہ نابینا افراد کے لئے کچھ کریں۔
شانزہ اپنے فائنل یئیڑ کے پروجیکٹ کو لانچ کر نے کے بعدکسی سرمایہ کار کی منتظر ہیں جس سے ان کے اس پروجیکٹ اور نابینا افراد کی زندگی میں آسانیاں آ سکیں گی۔ اس ایک جوتے کی تیاری پر کم ازکم دس اور زیادہ سے زیاہ بارہ ہزار روپے لاگت آئی ہے اور پیشہ ورانہ میٹریل، آلات اور بڑے پیمانے پر تیار کرنے کی صورت میں ان کی لاگت میں کافی کمی آجائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں