پاکستانی لڑکی اقصی اجمل کی بڑی کامیابی

پاکستانی لڑکی اقصی اجمل کی بڑی کامیابی

ٹویوٹا کے سب برنڈ، لیکسس نے 2020 کے ڈیزائن ایوارڈ کے لئے چھ فائنلسٹ کا اعلان کر دیا ہے۔ نسٹ گریجویٹ اقصیٰ اجمل نے بھی نابینا افراد کے لئے سلائی مشین ڈیزائن کرنے کے لئے ٹاپ 6 میں جگہ بنا لی ہے۔ یہ پہلا موقع ہے جب کسی پاکستانی نے مدمقابل ایوارڈ کے لئے فائنل میں جگہ بنائی ہے۔

پاکستانی لڑکی اقصی اجمل کی بڑی کامیابی

ان کا انتخاب 79 ممالک سے دو ہزار دو سو چالیس پروجیکٹس میں سے ہوا ہے۔ دوسرے فائنلسٹ کا تعلق امریکہ، یورپ، چین اور کینیا سے ہے۔

اقصٰی اس ایواڈایونٹ میں بزنس مینوں سے تقربیا پچس ہزار یوایس ڈالر کے فنڈز بھی لے سکیں گی۔
اقصیٰ اجمل (پاکستان) – ایک قابل رسائی سلائی مشین جس میں نابینا افراد کے لئے آمدنی پیدا کرنے میں مدد کے لئے سلائی کی مہارت شامل ہے۔
پرسیوٹ کے بارے میں

پاکستان کی کل آبادی کا تقریبا 45٪ ٹیکسٹائل انڈسٹری سے وابستہ ہے۔ پاکستان میں نابینا افراد کو ہمیشہ محدود مواقع کی وجہ سے اپنی صلاحیتوں کو پورا کرنا مشکل معلوم ہوا ہے، لہذا، خاص طور پر ان کے لئے تیار کردہ ایک سلائی مشین ان کو قابل احترام آمدنی حاصل کرنے میں مدد دے سکتی ہے۔
پرسویٹ سلائی کی مہارت کو آمدنی میں شامل کرنے کا ایک آسان طریقہ مہیا کرتا ہے دھاگے کا راستہ زیادہ آسان اور ہموار ہے۔ صارف اسپول پن سے مشین کے بازو اور لوپ کے ذریعے سیدھے، سیدھے راستے پر چلتا ہے، پھر نیچے انجکشن تک جاتا ہے۔ عمل مکمل ہونے کو یقینی بنانے کے لئے مشین ہر مرحلے پرآزمائی جا چکی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں