ڈاکٹر فیصل شفاعت

ڈاکٹر فیصل شفاعت

پاکستانی ماہر نے آسٹریلیا کا سب سے بڑا ایواڈ ینگ سائنٹسٹ ایواڈ کا جیت کر پاکستان کا نا م کو چار چاند لگا دئیے
پاکستان کے ینگ ترین سائنس دان ڈاکٹر فیصل شفاعت نے ینگ سائنٹسٹ 2019کا ایواڈ اپنے نام کیا۔ ڈاکٹر فیصل پہلے مسلم پاکستانی ہیں جنہوں نے یہ ایواڈ اپنے نام کیا ہے۔سڈنی میں ہونی والی پندہوریں کانفرنس آن ڈاکیومنٹ انیالیسس اینڈ ریلگگنیشن (آئی سی ڈی اے آر)میں ان کو اس ایواڈ سے نوازا گیا۔ یہ ایواڈ پہلے چین، اسپین، امریکہ اور جرمنی کے سائنس دانوں کو دیا گیا تھا۔یہ اعزاز ڈاکڑ فیصل کو ڈاکیومنٹ کو تصویری تجزے کمپیوٹنشنل فارنسک پر دیا گیا ہے جو پاکستان کے لئے بڑی کامیابی ہے۔

ڈاکٹر فیصل شفاعت
                                                    ڈاکٹر فیصل شفاعت

یہ بات بہت اہم ہے کہ 1997میں آئی سی ڈی اے آر قائم ہونیوالی کمپیوٹر سائنٹسٹ کے لئے بہت اہم فورم ہے جس میں دستاویزات کی امیجنگ، ہاتھوں سے لکھی گئی تحریروں کی شناخت، سکرپٹ کی تصدیق اور ہیومن دستخط کی شناخت اور ایسے بہت سے کاموں کو نئی جدت کے ساتھ پیش کیا جا تا ہے

ڈاکٹر فیصل شفاعت

اگر با ت پر غور کریں تو اس سسٹم کی ضرورت بڑھتی جا رہی ہے یہ اب پوری دنیا کو اپنی لپٹ میں لے رہا ہے اور شاید اب کی اس کی ضروت بھی محسوس ہوتی ہے بہت بڑے بڑے اداروں میں اس کا استعمال ہورہا ہے جو کہ جدت پسندی اور تخلیق پسندی کی ایک اعلی مثال ہے اس کے ساتھ ساتھ اس میں کئی علوم شامل ہیں جس میں الگورتھم، ڈیٹاسائنس جیسے بڑے علوم شامل فہرست ہیں۔
ڈاکٹر فیصل نے نسٹ یونیورسٹی کے شعبہ کمپیوٹر سائنس میں ایک عرصہ تک تحقیق کی ان کے اہم کارناموں (سکرپٹ)کوپڑھنے والاایک خود کار نظام جو پاکستان کے ڈیجیٹل نظام کو ٹرقی کی ظرف لے کر جائے گا۔
ڈاکٹر فیصل نے دن رات محنت کر کے پاکستان کی آنے والی نسلوں کے لئے ایک ایسا نظام بنایا ہے جو رہتی دنیا تک لوگوں کو بہت سی ڈیجیٹل سہولیات فراہم کرے گایہ ہی وجہ ہے کہ ڈاکٹر فیصل کو دنیا بھر میں کامیابیاں ملی ہیں اور یہ سلسلہ ابھی روکنے کا نام نہیں لے رہا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں