کامیاب جوان پروگرام

کامیاب جوان پروگرام

عمران خان صاحب کا شمار دُنیا کے ان چند لیڈرز میں ہوتا ہے جو پا کستان کے نوجوانوں کو ہر لحاظ سے ہنر مند دیکھنا چاہتے ہیں مگر بدقسمتی سے بہت سے لوگ عمران خان صاحب کو ایک نظر نہیں دیکھنا چاہتے۔ اس ملک کے لوگوں کو شاید یہ گمان ہمیشہ رہے

کامیاب جوان پروگرام

گا کہ اس ملک کی بھاگ ڈور چند ہی لوگو ں کے ہاتھ میں ہوں گی مگر وہ یہ نہیں سمجھتے کہ وقت بے رنگ ہوتا ہے مگر بہت سے رنگ دیکھا دیتا ہے اور بہت سے لوگ ان رنگوں کی چمک دمک برداشت کر نہیں سکتے یا کرنا نہیں چاہتے۔ پاکستان کا ایک مخصوص طبقہ ہے جو کہ عمران خان نیازی صاحب کو سپورٹ کرتا ہے اور اس طبقے کا نام (پا کستان کی یوتھ) ہے۔ عمران خان صاحب نے اپنے ایک انٹرویومیں کہا تھا کہ میرا ووٹر ابھی چھوٹا ہے تو سمجھ دار لوگوں کو اب سمجھ آتی ہے کہ یہ کامیاب جوان پروگرام انہی ووٹرز کے لئے ہے۔ اس پروگرام ک ذریعے پاکستان کے بے روزگار مگر ہنر مند نوجوان اپنے خوابوں کو پایہ تکمیل تک پہنچا سکتے ہیں۔ اکیس سے پنتالیس سال کے نوجوان اور وہ لوگ جوکچھ کرنا چاہتے ہیں تو اس پروگرام کے ذریعے وہ اپنا کا م کر سکتے ہیں۔ اس لون کا 25%حصہ خواتین کے لئے مختص کیا گیا ہے جس سے پاکستان کی ہنر مند خواتین جو اپنے ہنر سے ثابت کر سکتی ہیں کہ پاکستانی خواتین کا مقابلہ کر نا آسان نہیں۔ ایک طرف بڑھتی ہوئی مہنگائی، بجلی کے بڑھتے ہوئے بل یہ سب بھی لوگوں کے لئے برداشت کرنا آسان نہیں۔

کامیاب جوان پروگرام
                           کامیاب جوان پروگرام

یہ پروگرام خاص طور پر ان لوگوں کے لئے ہے جو نئے نئے آییڈیاز پہ کام کرنا چاہتے ہیں ۔ آج کل پاکستان کی تقربیا ہر یونیورسٹی میں یہ سبجیکٹ پڑھیا جا رہا ہے جس کا فائدہ پاکستانی یوتھ کو ہی ہے۔ کامیاب جوان پروگرام کا تعلق بھی کاروباری دماغ رکھنے والوں سے ہی ہے تا کہ وہ سٹوڈنٹ جن کے کاروبار کے آییڈیاز تو ہیں مگر کرنے کے لئے سرمایہ نہیں تو وہ اس پروگرام کے ذریعے لان حاصل کر سکتے ہیں اور آسان اقساط میں ادا کر سکتے ہیں۔ عمران خان صاحب کے بارے میں اکثر لوگ کہتے ہیں کہ یہ یہودی لابی کو فالو کرتے ہیں مگر شاید ایسا ممکن نہیں کیونکہ جو انسان پاکستان کی خیر چاہتا ہے وہ کیسے یہودی لابی کو فالو کرسکتاہے جو ہمیشہ پاکستان کی آنے والی نسل کا سوچتا ہو وہ کیسے ملک دشمن ہو سکتا ہے۔ کامیاب جوان پروگرام کی ایک کڑی(ای روزگار) بھی ہے اور بقول وزیر اعلی عثمان بزدار کے یہ پروگرام نوجوانون کو گھر بیٹھے ماہانہ لاکھوں ڈالر کمانے کا موقع دے گا مگر ایک سوال یہ بھی ہوتا ہے کہ انٹرنیشل مارکیٹ میں کبھی ڈالر کا ریٹ اوپر تو کبھی نیچے کیا اس کا اثر نوجوان نسل پر پڑے گا مگر پاکستان کی انٹر نیشنل بزنسمارکیٹ میں جو نمایاں بہتری نظر آئی ہے وہ اس بات کا ثبوت ہے کہ ان پروگرام کا یوتھ کو ای روزگار کے ذریعے بہتر منافع دے گا۔
ہم اُمید کرتے ہیں کہ ایک دن ہماری نوجوان نسل دنیا میں سب سے آگ ے ہو گی اور کامیاب جوان پروگرام اس ملک کے ایک اچھا قدم ہوگا۔انشااللہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں