Tribute to player Hashim Khan through doodle

کھلاڑی ہاشم خان کو ڈوڈل کے ذریعے خراج عقیدت

کھلاڑی ہاشم خان کو ڈوڈل کے ذریعے خراج عقیدت
کھلاڑی ہاشم خان کو ڈوڈل کے ذریعے خراج عقیدت

گوگل نے پاکستان کے مایہ نازاسکواش کھلاڑی ہاشم خان کو ڈوڈل کے ذریعے خراج عقیدت پیش کیا ہے۔اسکواش کی دنیا میں پاکستان کا پرچم ہمیشہاُونچا کرنے والے ہاشم خان کوگوگل ڈوڈل کی جانب سے خراج عقیدت پیش کیا گیا ہے۔

کھلاڑی ہاشم خان کو ڈوڈل کے ذریعے خراج عقیدت

ہاشم خان کے والدمحترم عبداللہ خان پشاورمیں ایک کلب کے ملازم تھے جہاں انگریزفوجی افسران بہت شوق سے اسکواش کھیلا کرتے تھے۔ اسی دوران ہاشم خان کھلاڑیوں کے بال بوائے کی حیثیت سے اپنی خدمات سرانجام دیتے اورجب انگریزکھیل کر گھروں کو واپس چلے جاتے تو وہ اپنے دوستوں کے ہمراہ اسکوش کھیلا کرتے۔ 1942 میں قسمت نے ان کا ساتھ دیا اور وہ برٹش ایئرفورس آفیسرزمیس میں اسکواش کوچ بن گئے۔
1944 میں انہوں نے ممبئی میں ہونے والی پہلی آل انڈیا اسکواش چیمپیئین شپ میں ہمت سے میڈان مارہ اور یہ چیمپیئین شپ اپنے نام کرکے تاریخ رقم کی اورمسلسل تین سال تک اعزازاپنے نام کے ساتھ جوڑے رکھا۔ پاکستان کے قیام کے بعد انہوں نے پاکستان فضائیہ میں ملازمت اختیارکرلی اور1949 میں ہونے والی پہلی قومی اسکواش چیمپئین شپ میں اپنے مُخالفین کو منہ توڑ جواب دیا اور یہ چیمپئین شپ بھی اپنے نام کی۔
1951 میں ہاشم خان نے پہلی باربرٹش اوپن اسکواش میں شرکت کی اورٹائٹل اپنے نام کرکے اسکواش کورٹ میں سبزہلالی پرچم کوسر بلند کیا، وہ 1951 سے 1958 تک برٹش اوپن چیمپئین کے فاتح بھی رہے۔ اس کے علاوہ وہ پانچمرتبہ برٹش پروفیشنل چیمپئین شپ جبکہ تین،تین مرتبہ یو ایس اوپن اسکواش اور کینیڈین اوپن کاسہرا بھی اپنے نام کیا۔
ہاشم خان 2014 میں سو سال کی عمر میں امریکادنیا سے کوچ کر گئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں