australian-open

آسٹریلیائی اوپن

آسٹریلیائی اوپن

وکٹوریہ کے وزیر اعظم ڈینیئل اینڈریوز کا کہنا ہے کہ جنوری میں جنوبی ریاست میں آسٹریلیائی اوپن اور دوسرے ٹینس ٹورنامنٹ کا انعقاد کوروناوائرس کے سبب ٹینس آسٹریلیا (ٹی اے) کی شیڈول پر بریک لگانے کی وجہ سے کوئی ”معاہدہ” نہیں کیا گیاہے۔
ٹی اے باس کریگ ٹیلی نے میلبورن اخبار کو بتایا کہ اے ٹی پی کپ اور دیگر ایونٹس جنوری میں وکٹوریہ میں سال کے پہلے گرینڈ سلیم کی قیادت میں ہوں گے، کیونکہکوروناوائرس وبائی امراض کی وجہ سے بہت سے لاجسٹک چیلنجز درکار ہیں۔
اس لئے اینڈریوزکا کہنا ہے کہ صحت کے حکام نے ٹی اے کے منصوبوں پر کسی قسم کے دستخط نہیں کیے ہیں۔
اینڈریوز نے صحافیوں کو بتایا، ”یہ خیال کہ…. اب ان تمام ٹینس کھلاڑیوں کا مقابلہہوگا، جو طے نہیں ہوا ہے، بالکل حل نہیں ہوا ہے۔”
”ہمیں ان تمام چیزوں پر ایک طریقہ کار سے کام کرناپڑے گا۔ (آسٹریلیائی اوپن) ایک بہت اہم واقعہ ہے۔ بالکل۔ لیکن کورونا کی تیسری لہر سے احتیاط کرنا اس سے بھی زیادہ اہم ہے، لیکن ہم ان معاملات کو جاری رکھیں گے۔
”مجھے لگتا ہے کہ ہم ایونٹ کو آگے بڑھا سکتے ہیں، لیکن اس سے مختلف نظر آنا ہے۔”
ایک بار کوویڈ 19 کے وسط سال میں دوسری لہر پھیلنے کا مرکز بننے کے بعد، وکٹوریہ میں چارماہ کے لاک ڈاؤن کے بعد مسلسل 17 دن تک کوئی نیا معاملہ ریکارڈ نہیں ہو پایا۔
پیر کے روز جنوبی آسٹریلیا کی ریاست میں ایک درجن سے زیادہ نئے معاملات کی اطلاع ملنے کے بعد یہ ملک وبا پھیلانے والے الرٹ پر واپس آچکا ہے، پچھلے دن کے مقابلے میں یہ ڈرامائی اضافہ ہوا ہے جس کی وجہ سے دیگر ریاستوں کو داخلی سرحدوں کو سخت کرنے پر مجبور کیا گیا ہے۔
ٹیلی نے ہیرالڈ سن کو بتایا کہ مردوں کے سیزن کے افتتاحی اے ٹی پی کپ اور برسبین انٹرنیشنل سمیت آسٹریلیائی اوپن وارم اپ اور ایڈیلیڈ، ہوبارٹ اور کینبرا میں ہونے والے ایونٹس کو وکٹوریہ منتقل کیا جائے گا۔
اخبار نے ان کے حوالے سے کہا، ”اب وکٹوریا میں ہر کسی کے بغیر آسٹریلیائی اوپن کا آگے بڑھنے کا کوئی خطرہ نہیں ہے اور ہمارے پاس اس کی ضمانت پہلے نہیں تھی۔”
رائٹرز کے رابطہ کرنے پر ٹی اے نے اس پر کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کردیا۔
برسبین، ہوبارٹ اور ایڈیلیڈ ایونٹس کے ٹورنامنٹ کے ڈائریکٹرز نے کہا کہ ان کے ٹورنامنٹ وکٹوریہ میں کھیلے جائیں گے۔
برسبین انٹرنیشنل ٹورنامنٹ کے ڈائریکٹر مارک ہینڈلی نے کہا، ”کوئینز لینڈ میں ٹینس کے شائقین اس فیصلے کے ساتھ سمجھ بوجھ سے تھوڑا سا محسوس کریں گے لیکن موجودہ کوویڈ 19 پروٹوکول کا مطلب یہ ہے کہ میلبورن میں صرف ٹینس کا موسم گرما کھیل کے گروپ کے لئے محفوظ اور سب سے زیادہ ممکنہ انتخاب ہے۔” ایک بیان میں
ٹیلی نے بتایا کہ ہیرالڈ سن کے کھلاڑی میلبرن میں اترنے کے بعد دو ہفتوں کے سنگرودھ کے دوران بایوسیکور بلبلے میں ٹریننگ اور مقابلہ کرسکیں گے لیکن پھر وہ وکٹوریہ کے گرد گھومنے اور شائقین کے ساتھ گھل مل جانے میں آزاد ہوں گے۔
انہوں نے کہا، ”لہذا آسٹریلیائی اوپن کھلے ماحول میں کھیلا جائے گا اور کھلاڑی آزادانہ طور پر گھومتے پھریں گے، ساتھ ہی شائقین بھی – کم از کم 25٪ (صلاحیت) تک۔”

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں