چین سے معاہدوں کا مقصد امریکہ کے ساتھ عدم تعاون نہیں، سعودی عرب

سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے بیان دیا ہے کہ چین کے صدر کا دورہ اور تجارتی معاہدوں کا یہ مطلب نہیں کہ ہم امریکا کے ساتھ کوئی تعلق نہیں رکھنا چاہتے ہیں۔

گلف میڈیا کے مطابق چین کے صدر شی جنپنگ نے مملکت کے دورے کے آخری روز خلیجی کونسل اور عرب چین سمٹ میں شرکت کی اور چین اور جی سی سی ممالک کے مابین آزاد تجارتی معاہدے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

عرب چینی سربراہی اجلاس کے اختتام پر لیگ آف عرب اسٹیٹس کے سیکرٹری جنرل احمد ابو الغیط اور خلیج تعاون کونسل کے سیکرٹری جنرل نائف الحجراف کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس میں سعودی وزیر خارجہ نے کہا کہ چین کے ساتھ ہمارے تعلقات بہت زیادہ گہرے ہیں تاہم سعودیہ کثیر الجہت تعاون اورتعلقات پر بھروسہ رکھتا ہے۔

شہزادہ فیصل بن فرحان نے کہا کہ سعودی عرب کے چین اور امریکا کے ساتھ مشترکہ مفادات قائم ہیں اور ہم ان دونوں کے ساتھ کام جاری رکھیں گے۔

سعودی وزیر خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ امریکا اور چین کے علاوہ ہندوستان، جاپان اور جرمنی کے ساتھ بھی شراکت داری ہے۔ ہم اپنی پالیسیاں اپنے مفادات کے مطابق بناتے رہیں گے۔

وزیر خارجہ فیصل بن فرحان نے واضح کیا کہ چین-عرب تعاون فورم 2004 سے قائم ہے۔ چینی صدر شی جنپنگ کے دورے کو امریکا سے دوری قرار نہ دیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں