کشمیر ڈے سپشل

کشمیر ڈے سپشل

کشمیر ایک خوب صورت وادی جہاں شاید جنت کے نظارے نظر آتے ہیں شاید سارے جنتی وہی رہتے ہیں کیونکہ جتنی شہادتیں کشمیر یوں نے دی ہیں یوں لگتا ہے کہ جنت اُنہی کے لئے بنی ہو۔ یہ لفظ جنت اور جنتی کہنے اور سننے میں کتنے پیارے لگتے ہیں مگر یہا ں تو انسان تو انسا ن کا قتل کر رہاہے تو جنت کس کی، کون جائے گا یہاں تو کافر سے بھی بری حالت ہے اور جنت نہ کسی کافر کو ملی ہے اور نہ ملے گی۔ اگر با ت ہندوستان کے مودی کی کریں تو شاید اس کی چتا کو آگ لگنا بھی نصیب نہ ہو کیونکہ جو بند ہ اپنی ہندو برداری کے ساتھ مخلص نہیں تو مسلمانوں کے ساتھ کہاں ہو ں گا۔

کشمیر ڈے سپشل

پا نچ فروری دوہزار بیس کو کشمیر میں لگے خون خار کرفیوکو ایک سوپچاسی دن ہوگئے ان ایک سو پچاسی دنوں میں کوئی ایسا دن نہیں جس دن کشمیر یوں کے گھروں میں شام غریباں کا منظر نہ دیکھا گیا ہو۔ ہر شام مائیں، بہنیں اپنے باپ، بھائی کا ماتم کرتی ہیں مگر خالی دروازے تکتی یہ بے سہارہ آنکھیں کسی نہ کسی شیمر کی حواس کا نشانہ بن جاتی ہیں اور اپنی ہی عزت کا جنازہ اپنی آنکھوں سے خود دیکھتی ہیں۔ اقوام متحدہ سمیت کسی بھی عالمی ادارے نے کشمیر کے مسئلے پر بات نہیں کی اور نہ ہی مستقبل قریب میں کوئی آثار نظر آرہا ہے۔
اسلامی جمہوریہ پاکستان کے وذیراعظم عمران خان نیازی نے کشمیر کے مسئلے پر بات تو کی بات سے لگتا ہے کہ شاید صرف اپنی تعیریفوں کے لئے ہی تھی کہ(واہ واہ کیا بات ہے عمران خان کی)۔ اب جو کشمیر کی حالت ہے اس کے بعد صرف یہ ہی کہا جا سکتا ہے کہ اب نہیں تو کبھی نہیں۔

کشمیر ڈے سپشل
کشمیر ڈے سپشل

پانچ فروری کو پورے پاکستان میں کشمیر سے یکجہتی کے لئے پورے پاکستان کے لوگ سڑکوں پر ریلی اور جلوس نکلتے ہیں پاکستان کا مطلب کیا، کشمیر ہماراہے جیسے نعرے تو لگاتے ہیں مگر کیا ہم ان نعروں پر پورہ بھی اُتر بھی پائے گے یا نہیں۔
پاکستان کی حکومت اور عوام کی آنکھیں کھولنے کے لئے مودی کا یہ بیا ن ہی کافی ہے کہ خون اور پانی ایک ساتھ نہیں بہہ سکتے اور یہ بیان اس نے ایک بار نہیں بار بار دہرایا مگر مودی چائے والا یہ بات نہیں جانتا کہ پھر ہر یزید کے لئے اک حسینی لشکر ضرور اُٹھتا ہے جو اپنے صبر سے ہمیشہ کے لئے اپنا نام امر کر لیتا ہے۔ انشااللہ وہ وقت دور نہیں جب کشمیر آزاد ہوں گا اور انڈیا ہمارہ غلام ہوگا۔

پاکستان زندہ با د۔۔۔۔کشمیر پائندہ باد

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

کشمیر ڈے سپشل” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں