دکانیں ساڑھے 8 بجے بند کرنے کے فیصلےپر تاجر برادری ناخوش

کراچی: تاجر برادری مارکیٹیں ساڑھے 8 بجے بند کرنے کے فیصلے پر ناخوش۔

تاجر بردرای کے رہنماؤں جن میں‌ عتیق میر ، جمیل پراچہ، شرجیل گوپلانی نے پریس کانفرنس کی۔

جمیل پراچہ کا کہنا ہے کہ ہم نے بارہ بجے تک شادی ہال اوردس بجے تک دکانیں اور بند کرنے کی تجویزپیش کی تھی لیکن ہماری سنتا کون ہے ، ہمیں احتجاج پر مجبور کر رہے ہیں‌، یہ ہی تو ہمارا سیزن ہوتا ہے، ایسے فیصلوں سے معیشت تباہ ہو جائے گی جبکہ پہلے ہی معیشت وینٹی لیٹر پر ہے ، حکومت فیصلے پر غور و فکر کرے۔

شرجیل گوپلانی نے کہا کہ پورٹ پر کنٹینر سے لاکھوں ڈالز باہر جا رہے ہیں مگر ہمیں‌ ڈالرز ڈالز دینا گناہِ‌ کیبرہ ہے ، اور یہاں یہ صورتِ حال ہے کہ زبردستی امپورٹرز کے اکاؤنٹس سے پیسے نکالے جا رہے ہیں،اگرہماری دکانیں بند ہو گئیں تو بے روزگاری آسمان سے باتیں‌کریں‌ گی.

عتیق میر کا کہنا تھا کہ ہم حکومت کا یہ فیصلہ مسترد کرتے ہیں، اگر زبردستی دکانیں بند کروانے کی نوبت آئی توبھرپور احتجاج ہوگا، جس حکومت کے پاس وزرا نہیں وہ فیصلے کیسے کر سکتی ہے، سیاست کا یہ عالم ہے کہ وزیر دفاع توانائی کے فیصلے کرتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں